وزیراعظم بن کر اداروں کو مستحکم اوروسائل کی عوام میں منصفانہ تقسیم کرونگا،عمران خان

دل کی بات آخر زباں پر آ ہی گئی عمران خان نے وزیراعظم بننے کی خواہش کا اظہارکردیا۔ کہتےہیں کہ وزیراعظم بن کر اداروں کو مستحکم اوروسائل کی عوام میں منصفانہ تقسیم کرینگے۔ کپتان نے نظرین پانامہ کی پچ پر بھی جما لیں ان کا کہناہے کہ پاناما کا فیصلہ پاکستان کی سیاست کو بدل کر رکھ دے گا۔ تفصیلات کےمطابق اسلام آباد بزنس سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین پی ٹی آئی عمران دلی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ وزیراعظم بن کراداروں کو مضبوط اور وسائل کی منتقلی عوام تک پہنچائیں گے۔ الیکشن لڑکرکیا نوازشریف تھانیدار بننا چاہتے ہیں نوازشریف ماڈل صرف پل ، تعمیرات اور بلڈنگز ہے۔ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا کہناتھا کہ پانامہ کیس کا فیصلہ آئندہ ہفتے تک متوقع ہے ۔ پاناما کا فیصلہ اشرافیہ کے طرز حکومت کو بدل کر رکھ دے گا ۔ چیئرمین پی ٹی آئی کا کہناتھا کہ ہم نے ڈالرلے کر جہادی پیدا کیا تو ڈالر دے کر ماربھی دیا۔ ہمیں امریکا سے مل کر افغان جہاد نہیں کرنا چاہیےتھا۔ ڈونلڈ ٹرمپ کے انتخاب پر سوچتا تھا کہ وہ برا ہےاس نے ٹیم کا انتخاب کیا تو پتا چلا وہ برا نہیں بدتر ہے۔ کپتان نے کراچی میں قیام امن کےاقدامات پر سابق آرمی چیف جنرل (ر) راحیل شریف کی تعریف بھی کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں