آخر سندھ حکومت کیا چاہتی ہے؟ آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ تیسری بار پھر تبدیل

سندھ کابینہ نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو تبدیل کرنے کی منظوری دیتے ہوئے سردارعبدالمجید دستی کو نیا آئی جی مقرر کرنے کی سفارش کردی۔ذرائع کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت سندھ کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو ہٹانے سے متعلق سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے پر کابینہ کو بریفنگ دی گئی اور وزیراعلیٰ نے کابینہ کو آئی جی سندھ کے معاملے پر بھی اعتماد میں لیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں کابینہ نے انسپکٹر جنرل پولیس سندھ اے ڈی خواجہ کو تبدیل کرنے کی منظوری دی جب کہ سردار عبدالمجید دستی کو نیا آئی جی مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق سندھ حکومت کی جانب سے نئے آئی جی سندھ کی تقرری کے لیے سمری جلد وفاق کو بھیجی جائے گی جس میں پولیس سروس کے گریڈ 21 کے افسر سردارعبدالمجید کا نام آئی جی سندھ کے لیے ترجیحی بنیاد پر رکھا جائے گا جب کہ دیگر ناموں میں چیرمین اینٹی کرپشن سندھ غلام قادر تھیبو اور ایڈیشنل آئی جی ٹریفک سندھ خادم حسین بھٹی کے نام شامل ہوں گی۔واضح رہے کہ گزشتہ دنوں سندھ حکومت نے اے ڈی خواجہ کی خدمات وفاق کے سپرد کرکے عبدالمجید دستی کو قائم مقام آئی جی مقرر کردیا تھا تاہم سندھ ہائی کورٹ نے صوبائی حکومت کا نوٹی فکیشن معطل کرتے ہوئے اے ڈی خواجہ کو ان کے عہدے پر بحال کردیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں