استغفراللہ!! پانچ سالوں میں متعدد شادیاں کرنیوالے پاکستانی شخص نے اپنی ازواج کو جسم فروشی پر لگا دیا

پاکستانی شہری نے جسم فروشی کی کمائی کھانے کے لیے پانچ خواتین سے شادیاں رچائیں جنہیں بعدازاں جسم فروشی کے دھندے پر مجبور کردیا ، ایک بیوی اس ظلم سے بھاگ کھڑی ہوئی جبکہ پانچ ماہ کی حاملہ ایک خاتون نجی ٹی وی پرساری کہانی بے نقاب کرنے پر مجبور ہوگئی ۔نجی ٹی وی کے پروگرام ’پکار‘ میں گفتگو کرتے ہوئے تشدد کا شکار خاتون نے اپنے جسم کے مختلف حصوں پر موجود زخمی اور سگریٹ سے داغے جانے کے نشانات دکھاتے ہوئے دعویٰ کیا کہ اسے اپنے شوہر نے جلادیا، ایک روز سی آئی اے سٹاف کے ایس ایچ او چوہدری اعجاز اور ایک دوسرے شخص کیساتھ مل کر میرے شوہر نے شراب نوشی کی اور پھر مجھے کہاکہ تھانیدار کیساتھ جسمانی تعلق قائم کریں، میں نے انکار کیا تو تشدد شروع کردیا۔ قرآن کی قسم کھاتے ہوئے خاتون نے دعویٰ کیاکہ شوہرزبردستی گندہ کام کرواتاہے اور انکار کریں تو مارپڑ تی ہے ، اس دن بھی کمرے کی کنڈی لگا کر بہت مارا، واسطے دینے پر بھی نہیں چھوڑا، تھانیدار نے بھی نہیں چھڑایا کیونکہ اسی کیلئے تو میراشوہر کہہ رہاتھا، پھر بے ہوش ہوگئی اور پتہ نہیں کہ کب اور کیسے جلایاگیا۔ایک سوال کے جواب میں خاتون نے انکشاف کیا کہ شوہر نے پانچ سالوں میں پانچ شادیاں کیں ، میں دوسری تھی اور میرے بعد بھی تین شادیاں کیں، سب سے یہی کام کرواتاہے ، اس کام سے تنگ آکر ایک خاتون بھاگ گئی اور طلاق لے لی ۔ نجی ٹی وی چینل کی خاتون اینکر کے مزید سوال پر مضروبہ خاتون نے بتایاکہ وہ ایک بچے کی ماں اور پانچ ماہ کی حاملہ ہے ، تشدد کا نشانہ بنائے جانے کے دن ملزم کی چھوٹی بیوی بھی ایک اور مرد کیساتھ دوسرے کمرے میں موجود تھی لیکن کسی نے نہیں چھڑایا، والدین کو بھی نہیں ملنے دیتا، اگر کوئی بات کریں تو نہرمیں پھینک کر مارنے کی دھمکیاں دیتاہے ، مجھے انصاف چاہیے ۔