کلبھوشن یادیو کون تھا اور کہاں سے آیا؟ بھارتی میڈیا نے ہی سارے راز فاش کر دیئے

نئی دہلی(ویب ڈیسک)پاکستان میں سزائے موت پانیوالے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کے بارے انکشاف ہوا ہے کہ وہ ایران میں سے پاکستان میں آیا اور اس کا تعلق بھارت سے تھا۔بھارتی اخبار ’انڈین ایکسپریس‘ نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا کہ کلبھوشن یادیو بھارت کا نیوی افسر تھا اور اس نے حسین مبارک پٹیل کے نام سے پاسپورٹ بنوایا۔ ساتھیوں نے بھی انکشاف کیا تھا کہ ان کو شبہ تھا کہ کلبھوشن لمبے لمبے عرصے تک غائب رہتا تھا جبکہ ایران نے بھی اس کی مشکوک سرگرمیوں کے بارے بھارت کو آگاہ کیا تھا۔رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ بھارتی شہری کا اصل نام کلبھوشن یادیو ہے لیکن اس نے پاکستان میں حسین مبارک پٹیل کے نام سے اور L9630722 کے نمبر سے پاسپورٹ بنوایا تھا جو کے پونا سے بنوایا گیا تھا۔ نیوی میں ساتھیوں نے انکشاف کیا کہ کلبھوشن ڈیوٹی کے دوران اکثر غائب رہتا تھا جو کہ اس بات کے واضح اشارے تھے کہ وہ سرکار کے کسی کام میں ملوث ہے۔اخبار کی رپورٹ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا کہ ایران بھی کلبھوشن کی سرگرمیوں کے بارے تحقیقات کررہا تھا او رایرانی سفیر نے نئی دہلی کو اس معاملے کے بارے غیر رسمی طور پر بھی آگاہ کردیا تھا۔ کلبھوشن یادیو کے والد ممبئی میں ریٹائرڈ اسسٹنٹ کمشنر ہیں جبکہ چچا بھی پولیس والے رہ چکے ہیں۔یاد رہے کراچی اور بلوچستان میں دہشتگردانہ کارروائیاں کرانے پر بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کاگزشتہ روز پاکستان میں سزائے موت سنائی گئی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں