ایس ایس پی راو انوار کے خلاف سابق پولیس افسر کی سندھ ہائیکورٹ میں درخواست

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) اربوں روپے بیرون ملک بھجوانے کے الزام میں ایس ایس پی ملیر راو¿ انوار کے خلاف سندھ ہائیکورٹ میں درخواست دائر کردی گئی جس میں ان کے بیرون ملک جانے پر پابندی کی بھی استدعا کی گئی ہے،تفصیلات کے مطابق سابق ایس ایس پی نیاز کھوسو کی جانب سے سندھ ہائی کورٹ میں ایس ایس پی ملیر راو¿ انوار کے خلاف درخواست دائر کی گئی ہے جس میں وفاقی وزیر داخلہ، نیب، ایف آئی اے اور آئی جی سندھ کو فریق بنایا گیا جب کہ درخواست میں مو¿قف اختیار کیا گیا ہے کہ راو¿ انوار نے مختلف ممالک کے 64 دورے کیے ہیں جن میں 85 ارب روپے کا زر مبادلہ بیرون ملک منتقل کیا، وہ 9 برس سے ملیر کے ایس ایس پی تعینات ہیں اور اس دوران راو¿ انوار نے اربوں روپے کی جائیدادیں اپنے اہلخانہ کے نام بنائی ہیں۔درخواست گزار کی جانب سے کہا گیا ہے کہ راو¿ انوار چائنہ کٹنگ اور زمینوں پر قبضے میں ملوث ہیں اور انہوں نے دبئی اور برطانیہ میں اپنے اثاثہ بنائے ہوئے ہیں جب کہ زر مبادلہ بیرون ملک بھیجنے کے لیے ملیر میں من پسند افسران تعینات کیے ہوئے ہیں۔ درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی کہ راو¿ انوار کے خلاف نیب کے ذریعے انکوائری کارروائی کی جائے اور ان کا نام ای سی ایل میں بھی شامل کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں