لاپتہ کارکنوں کا معاملہ ¾ پاکستان پیپلز پارٹی کا تیسرے روز بھی قومی اسمبلی سے واک آﺅٹ

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان پیپلز پارٹی نے قومی اسمبلی کے اجلاس کے دور ان تیسرے روز بھی ایوان سے واک آﺅٹ کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ جب تک حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے افراد کے حوالے سے جواب نہ آیا پیپلز پارٹی ایوان کی کارروائی میں حصہ نہیں لے گی۔ جمعہ کو قومی اسمبلی کے اجلاس میں نکتہ اعتراض پر پیپلز پارٹی کے پارلیمانی لیڈر سید نوید قمر نے کہا کہ گزشتہ پانچ دنوں سے ہم درخواست کر رہے ہیں کہ ملک میں لوگوں کو اٹھایا جاتا ہے جس کے بعد لوگ لاپتہ ہو جاتے ہیں۔ ان کو صرف ایک شخص سے تعلق کی بناءپر مختلف علاقوں سے اٹھایا گیا ہے۔ جب تک ہمیں کوئی شہادت نہیں ملتی ہم یہی فرض کریں گے کہ انہیں سرکار نے ہی اٹھایا ہے۔پانچ دن گزرنے کے باوجود بھی ہمیں حکومت کی طرف سے جواب نہیں دیا گیا۔ اگر یہ صوبہ کا بھی معاملہ ہے تو متعلقہ وزیر کو صوبائی حکومت سے بات کرکے ایوان کو بتانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ معاملات اس طرح نہیں چلیں گے۔ حکومت کے پاس اگر جواب ہے تو ہمیں دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ خاموشی سے بیٹھنا اس ملک کے لئے بہتر نہیں ہوگا۔ یہ ایشو اس طرح ختم نہیں ہوگا۔ ڈپٹی سپیکر نے کہا کہ چار دنوں سے یہی مطالبہ کیا جارہا ہے۔ اجلاس میں پیپلز پارٹی کے رکن رمیش لال نے نکتہ اعتراض پر ایوان میں کورم کی نشاندہی کردی ¾ڈپٹی سپیکر نے ایوان میں گنتی کا حکم دیا۔ارکان کی مطلوبہ تعداد پوری نہ نکلنے پر قومی اسمبلی کا اجلاس پیر کی شام چار بجے تک ملتوی کردیا گیا۔