افغان فوج کو منہ کی کھا کر بھی چین نہ آیا، فوج کو حکم جاری

کابل(ویب ڈیسک)افغان وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ سرحدی فورسز کو ملکی سرحدوں پر پاکستانی مبینہ حملوں کے جواب میں موثر کاروائی کی ہدایت کردی گئی ہے ۔ہفتہ کو افغان میڈیا کے مطابق وزارت داخلہ کے ترجمان نجیب دانش کا کہنا ہے کہ افغان سرحد پر تعینات اہلکاروں کومبینہ پاکستانی حملوں کا موثر جواب دینے کی ہدایت کی گئی ہے ۔یاد رہے کہ جمعہ کی صبح سپین بولدک پر چمن سرحد کے ساتھ افغان سرحدی فورسز نے بلااشتعال فائرنگ شروع کی تھی جس کے بعد پاکستانی سیکورٹی فورسز کی جانب سے بھی موثر کاروائی کی گئی ۔افغان حکام کا دعویٰ ہے کہ پاکستان کی فائرنگ سے اسکے چار سرحدی پولیس اہلکارہلاک ہوگئے تھے ۔گزشتہ روز افغان بارڈر فورسز کی جانب سے پاکستان میں مردم شماری ٹیم کو نشانہ بنایا گیا تھا تاہم افغان فورسز کی فائرنگ اور گولہ باری سے 11 عام پاکستانی شہری شہید جب کہ 46 افراد زخمی ہوئے تھے جس کے بعد پاکستانی دفترخارجہ نے افغان ناظم الامور کو طلب کرکے شدید احتجاج کیا تھا جب کہ دونوں ممالک کے ڈی جی ایم اوز نے بھی ہاٹ لائن پر رابطہ کیا اورفائرنگ کا سلسلہ تھم گیا تاہم دونوں اطراف تاحال کشیدگی برقرار ہے اور سرحد پر سیکیورٹی ہائی الرٹ ہے ۔کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کے لئے پاک فوج کے تازہ دم دستے بھی باب دوستی پر پہنچ چکے ہیں جب کہ پاک فوج کے 3 ہیلی کاپٹروں کے ذریعے سرحد کی فضائی نگرانی بھی کی جارہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں