(ن)لیگ اور پی ٹی آئی کے گرفتار کارکنوں سے تحقیقات مکمل

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )ایف آئی اے نے پاک فوج کیخلاف سوشل میڈیا پرمنفی پروپیگنڈا کرنے والے مسلم لیگ (ن) اور پی ٹی آئی کے گرفتار کارکنوں سے تحقیقات مکمل کر لی ہیں جبکہ مزید کئی درجن افراد کی گرفتاریاں متوقع ہیں ‘ یہ گرفتاریاں جاری انکوائری مکمل ہوتے ہی کر لی جائیں گی‘جرم ثابت ہونے کی صورت میںملزمان کیخلاف سائبر کرائمز ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی‘دوسری طرف تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے ایف آئی اے ہیڈ کوارٹر جا کر پی ٹی آئی اے کے گرفتار کارکنوں سے ملاقات کر کے ہر قسم کی قانونی معاونت کی یقین دہانی کروائی ہے۔ اتوار کو ذرائع کے مطابق وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے سوشل میڈیا پر پاک فوج کے خلاف مہم چلانے والوں سے تحقیقات مکمل کر لی ہیں۔ 6 افراد ایف آئی اے ہیڈ کوارٹر میں گرفتار ہیں ان میں سے 4 کا تعلق اپوزیشن کی بڑی جماعت تحریک انصاف ایک کا تعلق مسلم لیگ(ن) جبکہ ایک سرکاری ملازم ہے جو کراچی سے گرفتار کیا گیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق پاک فوج کے خلاف پروپیگنڈا کے حوالے سے جاری انکوائری کیلئے درجنوں افراد کو طلبی کے نوٹس جاری کئے گئے ہیں جن کے بیانات ریکارڈ کرنے کے بعد ان کی گرفتاریوں کا فیصلہ ہو گا۔ واضح رہے کہ ایف آئی اے نے پاک فوج کیخلاف سوشل میڈیا پر موجود مواد کو نہ صرف بلاک کیا ہے بلکہ جن افراد کے فیس بک اکاﺅنٹس پر یہ مواد موجود تھا ان تمام کو طلبی کے نوٹسز جاری کر کے ان کے آفیشل پیجز کا ڈیٹا بھی محفوظ کر لیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ان افراد کیخلاف سائبر کرائم ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ دوسری جانب ایف آئی اے پر سیاسی جماعتوں کی طرف سے بھی شدید دباﺅ ہے کہ ان کے کارکنان کو رہا کیا جائے۔ اس حوالے سے گزشتہ روز تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے ایف آئی اے ہیڈ کوارٹر کا دورہ کیا اور گرفتار کارکنوں سے ملاقات کر کے انہیں ہر قسم کی قانونی معاونت کی یقین دہانی کروائی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں