جنرل راحیل سعودی عرب میں اپنے کام کی نوعیت سے ناخوش ، واپسی پر غور

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) ملک میں اس وقت سابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی ممکن وطن واپسی کی اطلاعات گردش کر رہی ہیں۔ نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سابق آرمی چیف اس بارے میں سنجیدگی سے غور کر رہے ہیں کیونکہ ان کے خیالات میں اسلامی اتحادی فوج کی سربراہی بارے جو کردار سعودی حکومت نے انھیں بتایا تھا اس میں حقیقت کچھ اور ہی سامنے آرہی ہے۔ خطے میں امریکہ کا اثرو رسوخ غیر معمولی حد تک زیادہ ہے جبکہ جنرل راحیل شریف کو اسلامی فوجی اتحاد کے سپہ سالار کی بجائے سعودی حکومت ایک سکیورٹی آفیسر کے طور پر استعمال کر رہی ہے جس کے لئے وہ تیار نہیں ۔ اس سے کہیں گنا بہتر کردار وہ واپس آکر اپنے ملک کےلئے کر سکتے ہیں کیونکہ جنرل راحیل جن صلاحیتوں کے حامل ہیں ان کا تقاضا ہے کہ ان سے ایک عرب ملک میں سکیورٹی آفیسر کا نہیں بلکہ ملکی سطح کا کوئی بڑا کام لیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں