راجیو گاندھی کو قتل کرنے والے شہری نے موت کی اجازت ملنے کی درخواست کر دی

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کے سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی کو قتل کرنے والے سری لنکن شہری کا حیران کن مطالبہ سامنے آگیا ہے ۔ راجیو گاندھی کو قتل کرنے والے سری لنکن شہری رابرٹ پائس نے مرنے کی اجازت دیے جانے کی درخواست کر دی ہے۔۔میڈیا رپورٹس کے مطابق راجیو گاندھی کو 1991ءکے دوران انتخابی ریلی میں قتل کرنے کے جرم میں گرفتار سری لنکن شہری رابرٹ پیاس کا کہنا ہے کہ انکے اہل خانہ بھی ملاقات کیلئے نہیں آتے اور ایسے میں ان کی زندگی کا کوئی مقصد نہیں رہا ۔ انہوں نے تمل ناڈو کی ریاستی حکومت سے استدعا کی ہے کہ رحم کی بنیاد پر مرنے کی اجازت دی جائے۔رابرٹ سری لنکا کے شہری ہیں اور راجیو گاندھی کے قتل کے سلسلے میں تمل ٹائیگرز کے جن7 سابق ارکان کو قید کی سزا ہوئی تھی ،ان میں سے ایک ہیں۔خیال رہے راجیو گاندھی کو 21 مئی 1991ءمیں جنوبی ہند کے سری پیرمبدور میں ایک انتخابی ریلی کے دوران ہلاک کر دیا گیا تھا۔اس قتل کے الزام میں سنتھن، مروگن، پیراریولن، نلنی، رابرٹ پایس، جے ٓٓکمار اور روی چندرن جیل میں عمر قید کی سزا کاٹ رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں