سعودی گمنام دوست نے آٹھ کروڑ قرض دیا،ایسا سعودی دوست جس کا نام ہے نہ کوئی پہچان جے آئی ٹی رپورٹ میں انکشاف

اسلام آباد پانامہ پیپرز لیکس پر قائم مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی رپورٹ میں انکشاف کیاگیا ہے کہ قطری شہزادہ ہی کہانی کا کردار نہیں ،گمنام سعودی دوست بھی موجود ہے،شریف خاندان کی العزیزیہ سٹیل ملز میں ایک دوست کی جانب سے 8کروڑ روپے کا قرض دیا گیا تاہم نامعلوم دوست کا کوئی نام ہے نہ پہچان اس کے باوجود خطیر رقم بطور قرض ادا کردی ۔ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی رپورٹ کے مطابق پانامہ سکینڈل میں پھنسے وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف کے صاحبزادے حسین نواز کے مطابق 2001میں العزیزیہ سٹیل مل بنانے کیلئے تریسٹھ کروڑ روپے سے زائد خرچ کئے جن میں سے 60 لاکھ امریکی ڈالرسے زائد رقم قطری شہزادے سے سیٹلمنٹ کے نتیجے میں حاصل کی گئی اور دوسرا کردار سعودی دوست بھی ظاہر ہوا جس نے 80 لاکھ امریکی ڈالر سے زائد کی رقم قرض کے طور پر دے دی جو پاکستانی کرنسی میں 8کروڑ روپے بنتے ہیں ،ایسا دوست جس کانام بھی نہیں معلوم مگر قرض بھی دے جس کا کوئی دستاویزی ثبوت بھی نہ ہو ، جے آئی ٹی رپورٹ کے مطابق حسین نواز کے دوست نے کروڑوں روپے کا قرض دیا تاہم حسین نواز کو اس کا نام تک یاد ہے نہ ہی کوئی دستاویزی ثبوت موجود ہے ،جے آئی ٹی اپنی رپورٹ میں واضح کرچکی ہے کہ قطری شہزادے سے لین دین کی کوئی دستاویزات ہیں اور نہ ہی کوئی ثبو ت جبکہ دوسری جانب کروڑوں روپے قرض دینے والے سعودی دوست کا کوئی نام نہ ہی کوئی پہچان اور نہ ہی قرض حاصل کئے جانے کا کوئی ثبوت ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں