اورکزئی ایجنسی میں بم دھماکہ، جاں بحق افراد کی تعداد 33 تک جا پہنچی

اورکزئی ایجنسی: صوبہ خیبر پختونخواہ کے ضلع اورکزئی ایجنسی میں ہونے والے بم دھماکے  کے نتیجے زخمی ہونے والے مزید افراد جاں بحق ہوگئے، جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد  33  ہوگئی ہے۔ابتدائی اطلاعات کے مطابق دھماکہ لوئر اورکزئی کے علاقے کلایا بازار میں ہوا ہے، علاقے میں جمعہ منڈی کا بازار لگا ہوا تھا۔ضلعی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ  اسپتال میں زیر علاج زخمیوں میں سے تین نے دم توڑ دیا ہے جس کے بعدجاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 33 ہوگئی ہے ہلاک شدگان میں 3 بچے بھی شامل ہیں، سیکیورٹی ذرائع کے مطابق معمولی زخمیوں اور لاشوں کو کلایا ہیڈ کوارٹر اسپتال منقل کیا گیا ۔کئی زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے جنہیں کوہاٹ منتقل کیا گیا، اموات میں اضافے کا خدشہ بھی ظاہر کیا جارہا ہے، پولیٹیکل انتظامیہ کا کہنا ہے کہ تاحال دھماکے کی نوعیت کا تعین نہیں کیا جاسکا۔سیکیورٹی نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا ہے جبکہ ریسکیو کا عملہ بھی امدادی کام جاری رکھے ہوئے ہے،دھماکے کے بعد صوبے کے تمام اسپتالوں میں ہائی الرٹ جاری کردیا گیا ۔وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا  ہےکہ امریکا کی افغانستان میں بد ترین ناکامی کے بعد پاکستان کو  اپنی سیکیورٹی کے سخت انتظامات  اور اپنے لوگوں کی حفاظت کے خصوصی اقدامات کرنے چاہئیں،انہوں نے واقعے کی سخت الفاظ میں مذمت بھی کی۔